داؤن لود کریں
0 / 0
482914/11/2014

ایک شخص نے روزے کی حالت میں کسی کو کہہ دیا: “میرا روزہ نہیں ہے”تو اس کے روزے کا کیا حکم ہے؟

سوال: 223736

میں نے رمضان میں ایک دن کسی کو جان بوجھ کر کہہ دیا کہ میرا روزہ نہیں ہے، تو میرے روزے کا کیا حکم ہے؟

اللہ کی حمد، اور رسول اللہ اور ان کے پریوار پر سلام اور برکت ہو۔

آپ کا یہ کہنا کہ: "میرا روزہ نہیں ہے" اگر اس کا مقصد یہ تھا کہ آپ نے اپنے روزے کی نیت توڑ لی ہے اور اب آپکا روزہ نہیں ہے، تو اس سے آپکا روزہ ٹوٹ چکا ہے، چاہے آپ نے کچھ کھایا ہو یا  نہ۔

پہلے سوال نمبر: (95766) کے جواب میں گزر چکا ہے کہ: جو شخص  روزہ توڑنے کی پکی نیت کر لے ، اور اسے اپنی نیت میں کسی قسم کا تردد نہ ہو ، تو اس کا روزہ ٹوٹ جاتا ہے، اور اسے اس دن کی قضا دینا ہوگی۔

اور اگر آپ نے  "میرا روزہ نہیں ہے" صرف غلط بیانی کے طور پر کہا، اور آپ نے روزہ توڑنے کی نیت نہیں کی ، تو یہ جھوٹ شمار ہو گا ، اوراس سے آپ کا روزہ نہیں ٹوٹے گا۔

کیونکہ روزہ اسی شخص کا ٹوٹتا ہے جو کھا ، پی کر ، یا جماع وغیرہ کر کے روزہ توڑے، یا روزہ توڑنے کی پکی نیت کر لے، چنانچہ  محض غلط بیانی سے  روزہ نہیں ٹوٹے گا، آپ جھوٹ بولنے پر اللہ تعالی سے توبہ کریں، کیونکہ جھوٹ بولنا اخلاق مذمومہ میں سےہے، اور اس سے روزے کا اجر کم ہو جاتا ہے۔

مزید کیلئے آپ سوال نمبر: (37989) کا مطالعہ کریں۔

واللہ اعلم.

ماخذ

الاسلام سوال و جواب

at email

ایمیل سروس میں سبسکرائب کریں

ویب سائٹ کی جانب سے تازہ ترین امور ایمیل پر وصول کرنے کیلیے ڈاک لسٹ میں شامل ہوں

phone

سلام سوال و جواب ایپ

مواد تک رفتار اور بغیر انٹرنیٹ کے گھومنے کی صلاحیت

download iosdownload android